Go Back   Urdu Planet Forum -Pakistani Urdu Novels and Books| Urdu Poetry | Urdu Courses | Pakistani Recipes Forum > General Forum > News and Current Affairs

Notices

News and Current Affairs All kind of news and Current Affairs will goes here

Reply
 
Thread Tools Display Modes
Old 01-06-2018, 07:58 PM   #1
journalist
Moderator

Users Flag!
 
Join Date: Nov 2011
Posts: 13,524
Points: 268,473, Level: 73
Points: 268,473, Level: 73 Points: 268,473, Level: 73 Points: 268,473, Level: 73
Activity: 99%
Activity: 99% Activity: 99% Activity: 99%
Thanks: 0
Thanked 10,321 Times in 6,774 Posts
journalist has a reputation beyond reputejournalist has a reputation beyond reputejournalist has a reputation beyond reputejournalist has a reputation beyond reputejournalist has a reputation beyond reputejournalist has a reputation beyond reputejournalist has a reputation beyond reputejournalist has a reputation beyond reputejournalist has a reputation beyond reputejournalist has a reputation beyond reputejournalist has a reputation beyond repute

Awards Showcase

Default American Friend shop up

امریکا کی دوستی!

فارسی کا ایک محاورہ ہے خوئے بدرا بہانہ بسیار یعنی بدی جن کی خصلت بن گئی ہو ان کو بدی کرنے کے لیے کسی بہانے کی ضرورت نہیں۔ امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ پر اس محاورے کا اطلاق پوری طرح ہوتا ہے۔ یہ وہ صدر ہیں جن کو خود امریکی بھی مسخرہ قرار دیتے ہیں لیکن امت مسلمہ کے لیے یہ مسخرہ خطرناک ترین ہے۔ بات صرف پاکستان کی نہیں، مسٹرٹرمپ پوری امت مسلمہ کے دشمن ہیں۔ ویسے تو ان کے پیشرو بھی کبھی مسلمانوں کے دوست نہیں رہے لیکن ٹرمپ نے تمام حدیں پار کر دی ہیں اور خود اعتراف کیا ہے کہ ان کے پیش رو بزدل تھے۔ اصل حقیقت یہ ہے کہ وہ بزدل نہیں تھے بلکہ منافقت کا نقاب چڑھا رکھا تھا اور مسلمانوں کے خون سے آلودہ ہاتھ دستانوں میں چھپا رکھے تھے۔ ڈونلڈ ٹرمپ کا ماضی بھی جارحیت اور غصے میں پاگل ہو جانے سے بھرا ہوا ہے۔ ان کے پیشرو بش جونیر نے اپنے خطاب میں صلیبی جنگ کا حوالہ دیا تھا جس میں پوری عیسائی دنیا کو شکست فاش ہوئی تھی۔ بش نے تو اس پر معذرت کرکے منافقت کا مظاہرہ کیا لیکن ڈونلڈ ٹرمپ کھلم کھلا صلیبی جنگ پر کمربستہ ہیں۔ قبلہ اول بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت بنانے کا اعلان فلسطینیوں یا کسی ایک ملک کے خلاف نہیں بلکہ پوری امت مسلمہ کے خلاف ہے۔ لیکن ٹرمپ کی چالاکی ہے کہ اس نے کچھ مسلم ممالک کو اپنا ہمنوا بنا لیا ہے۔ گزشتہ دنوں ٹرمپ نے کھل کر سعودی عرب کی حمایت کرتے ہوئے اعلان کیا کہ جو سعودی عرب کا دشمن ہے وہ امریکا کا دشمن ہے۔ یہ ایک طرح سے ایران کو انتباہ تھا لیکن اسرائیل کے پشت پناہ امریکا کا کسی مسلم ملک سے اظہار یکجہتی کرنا بلکہ پشت پناہی کا اعلان کرنا خود اس مسلم ملک کے لیے نقصان دہ ہے۔ سعودی عرب اور ایران کے اختلافات بہت پرانے ہیں لیکن اس تنازع میں امریکا کا کودپڑنا بہت سے شکوک و شبہات کو جنم دیتا ہے کہ معاملہ کچھ اور ہے اور امریکا اپنے پرانے بدلے بھی چکانا چاہتا ہے اور ایک مسلم ملک کو بحران میں مبتلا کرنا اصل مقصد ہے۔ کاش! ایسے میں مسلم عرب ممالک عجم و عرب جھگڑا ایک طرف رکھ کر امت کے نام پر متحد ہو جائیں ورنہ یہ کوئی راز نہیں کہ ایک ایک کرکے تمام مسلم ممالک امریکا اور اسرائیل کی زد میں آئیں گے۔ یہ بھی یاد رہنا چاہیے کہ اسرائیل کا دعویٰ مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ پر بھی ہے اور کہا گیا ہے کہ یہ یہودیوں کا وطن ہے۔ امریکا اس وقت پاکستان کے خلاف کھل کر سامنے آچکا ہے اور پاکستانی حکمرانوں نے امریکی حملے کا خدشہ بھی ظاہر کیا ہے تاہم حکمرانوں نے امریکی جارحیت کا منہ توڑ جواب دینے کے عزم کا اظہار کیا ہے اور یقینی طور پر پوری قوم اس عزم میں شریک ہے۔ گزشتہ جمعرات کو امریکا نے اور آگے بڑھ کر پاکستان کی سیکورٹی معاونت معطل کرنے کا اعلان کر دیا۔ اسی کے ساتھ پاکستان کو ان ممالک میں شامل کر لیا جہاں مذہبی آزادی نہیں ہے۔ فی الحال تو واچ لسٹ میں رکھا گیا ہے تاہم دیگر ممالک کے بارے میں کہا گیا ہے کہ وہ تو مذہبی آزادیاں پامال کر ہی رہے ہیں۔ حیرت انگیز طور پر امریکا کی اس فہرست میں نہ بھارت شامل ہے نہ اسرائیل۔ ظاہر ہے کہ یہ دونوں ممالک امریکا کے دوست ہیں۔ لیکن ان دونوں ممالک میں کھلم کھلا مذہبی آزادیاں پامال ہو رہی ہیں مگر ان کو دیکھنے کے لیے امریکا کے چشمے مختلف ہیں۔ بھارت نے اپنے مسلمان شہریوں کا ناطقہ بند کر رکھا ہے اور بہانے سے ان کی ہر قسم کی آزادی سلب کررہاہے۔ہندوؤں کی ماتا گائے کو کاٹنے کے جھوٹے الزامات لگا کر کئی مسلمانوں کو کاٹ کر رکھ دیا گیا۔ مندروں سے افواہ پھیلائی گئی کہ فلاں مسلمان کے ریفریجریٹر میں گائے کا گوشت رکھا ہوا ہے اور پھر دہشت گرد ہندوؤں نے اس مسلمان کو بے رحمی سے اینٹیں مار مار کر ہلاک کر دیا حالانکہ وہ سرکاری ملازم تھا۔ ایسے متعدد واقعات پیش آ چکے ہیں جن میں صرف مذہبی منافرت کی بنا پر بھارتی شہری مسلمانوں کو ہلاک کیا گیا۔ تاریخی بابری مسجد محض مذہبی منصب کی وجہ سے مسمار کی گئی اور آئے دن مسجد کی جگہ رام مندر بنانے کا اعلان سامنے آتا ہے۔ اب بھارتی حکومت نے مسلمانوں کے عائلی قوانین میں بھی مداخلت کر دی ہے۔ مسلمان ہی کیا ہندو انتہا پسند تو خود ہندودلتوں، ہریجنوں کے خلاف کئی صدیوں سے مذہبی منافرت کا مظاہرہ کرتے آرہے ہیں جس کی تفصیلات انتہائی خوف ناک ہیں۔ کیا بھارت نے مقبوضہ کشمیر کے مسلمانوں کو مذہبی آزادی دے رکھی ہے؟ اور امریکی لے پالک اسرائیل کی تو کیا بات کی جائے کہ اسے ہر جرم معاف ہے ورنہ مذہبی آزادیوں کا اس سے بڑا دشمن کوئی اور نہیں۔ پاکستان پر مذہبی آزادیوں کے حوالے سے تنقید سے شبہ ہوتا ہے کہ اس کے پیچھے قادیانیوں کا ہاتھ ہے جو اس بہانے سے دوسرے ممالک میں پناہ حاصل کر لیتے ہیں حالانکہ سابق وزیراعظم نواز شریف تو قادیانیوں کو اپنا بھائی قرار دے چکے ہیں یہ اور بات کی قادیانی اپنے سوا دوسروں کو مسلمان ہی نہیں مانتے۔ ایسی صورت حال میں کسی بھی طرح سے امریکا کے لیے نرم گوشہ رکھنا قومی جرم ہوگا_
journalist is offline   Reply With Quote
Reply

Bookmarks

Tags
american, friend, shop


Currently Active Users Viewing This Thread: 1 (0 members and 1 guests)
 

(View-All Members who have read this thread : 2
FawadDOT, journalist
Thread Tools
Display Modes

Posting Rules
You may not post new threads
You may not post replies
You may not post attachments
You may not edit your posts

BB code is On
Smilies are On
[IMG] code is On
HTML code is Off

Forum Jump


1 2 3 4 5 6 7 8 9 10 11 12 13 14 15 16 17 18 19 20 21 22 23 24 25 26 27 28 29 30 31 32 33 34 35 36 37 38 39 40 41 42 43 44 45 46 47 48 49 50 51 52 53 54 55 56 57 58 59 60 61 62 63 64 65 66 67 68 69 70 71 72 73 74 75 76 77 78 79 80 81 82 83 84 85 86 87 88 89 90 91 92 93 94 95 96 97 98 99 100 101 102 103 104 105 106 107 108 109 110 111 112 113 114 115 116 117 118 119 120 121 122 123 124 125 126 127 128 129 130 131 132 133 134 135 136 137 138 139 140 141 142 143 144 145 146 147 148 149 150 151 152 153 154 155 156 157 158 159 160 161 162 163 164 165 166 167 168 169 170 171 172 173 174 175 176 177 178 179 180 181 182 183 184 185 186 187 188 189 190 191 192 193 194 195 196 197 198 199 200 201 202 203